دل کے لئے مفید، کینسر کے خلاف مدافعت اور جلد کو خوبصورت بنانے کے لئے اروی کھائیے۔۔ اس کے خواص آپ کو بھی حیران کردیں گے

اروی کے صحت سے متعلق فوائد میں ہاضمے کو بہتر بنانے، خون میں شکر کی سطح کو کم کرنے، بعض قسم کے کینسر سے بچاؤ، جلد کی حفاظت ، بینائی کو بڑھانے،خون کی گردش میں اضافہ، بلڈ پریشر کو کم کرنے، مدافعتی نظام میں مدد اور دل کی بیماری سے بچنے کی صلاحیت شامل ہو سکتی ہے۔ نیشنل نیوٹرینٹ ڈیٹا بیس کے مطابق، اس میں غذائی ریشہ اور کاربوہائیڈریٹس کے ساتھ ساتھ وٹامن اے ، سی، ای، وٹامن بی6 ، اور فولیٹ کی اعلیٰ سطح ہوتی ہے ۔ اس میں میگنیشیم ، آئرن ، زنک ، فاسفورس، پوٹاشیم ، مینگنیز اور کاپر پایا جاتا ہے۔ یہ آپ کی خوراک میں کچھ پروٹین بھی فراہم کرتا ہے۔

ہاضمہ کی صحت کو بہتر بنا سکتا ہے:
اروی میں پائے جانے والے غذائی فائبر کی اعلیٰ سطح اسے معدے کی صحت کے لیے بہت اہم بناتی ہے ۔ ایک ہی سرونگ میں غذائی ریشہ کی روزانہ کی ضرورت کا 27 فیصد ہو سکتا ہے۔ فائبر ہمارے پاخانے میں بڑی مقدار میں اضافہ کرنے میں مدد کرتا ہے اور ہاضمہ کو بہتر بنانے میں مدد کرتا ہے۔ فائبر کا مناسب استعمال اضافی گیس، اپھارہ، درد اور قبض کو روکنے میں مدد کرتا ہے ۔

کینسر کے خلاف مدافعت:
کینسر کی بات کریں تو اروی ہمارے جسم میں اینٹی آکسیڈنٹ سرگرمی میں بھی اہم کردار ادا کرتی ہے۔ اس میں پائے جانے والے وٹامن اے، سی اور دیگر مختلف فینولک اینٹی آکسیڈنٹس کی اعلیٰ سطح ہمارے مدافعتی نظام کو بڑھا سکتی ہے اور ہمارے نظام سے خطرناک فری ریڈیکلز کو ختم کرنے میں مدد کر سکتی ہے۔ امریکن انسٹی ٹیوٹ فار کینسر ریسرچ نے ورلڈ کینسر ریسرچ فنڈ کے ساتھ مل کر ایک رپورٹ شائع کی، جس میں کہا گیا ہے کہ اروی میں پائے جانے والے کرپٹوکسینتھین کا براہ راست تعلق پھیپھڑوں اور منہ کے کینسر کے کم ہونے کے امکانات سے ہے۔

دل کی صحت کو بہہتر بنائے:
اروی میں پوٹاشیم کی ایک اہم سطح ہوتی ہے، ایک ضروری معدنیات جس کی ہمیں صحت مند اور فعال رہنے کی ضرورت ہے۔ پوٹاشیم نہ صرف پورے جسم میں جھلیوں اور بافتوں کے درمیان صحت مند سیال کی منتقلی کو آسان بناتا ہے بلکہ خون کی شریانوں اور دباؤ کو دور کرنے میں بھی مدد کرتا ہے۔ رگوں اور خون کی نالیوں کو آرام دینے سے، بلڈ پریشر کو کم کیا جا سکتا ہے، اور اس طرح مجموعی طور پردل کے نظام پر دباؤ کم ہو جاتا ہے۔

بصارت کو بہتر بنا ئے:
اروی میں متعدد اینٹی آکسیڈنٹس ہوتے ہیں جن میں بیٹا کیروٹین اور کرپٹوکسینتھین شامل ہیں۔ یہ اینٹی آکسیڈنٹس مفت ریڈیکلز کو آنکھ کے خلیوں پر حملہ کرنے اورموتیا بند کا باعث بننے سے روکنے کے ساتھ ساتھ بصارت کو بہتر بنانے میں بھی مدد کر سکتے ہیں !

جلد کی دیکھ بھال :
وٹامن ای اور وٹامن اے کے درمیان ، جب ہم اپنی غذا میں اروی کو شامل کرتے ہیں تو ہماری جلد اچھی طرح سے محفوظ رہتی ہے۔ یہ دونوں ضروری وٹامن جلد کی حالتوں کو ختم کرنے اور مجموعی سیلولر صحت کو فروغ دینے کے لیے کام کرتے ہیں، یعنی ہمارے زخم اور داغ جلد بھر جاتے ہیں، اور جلد میں صحت مند چمک واپس آسکتی ہے۔

مدافعتی نظام کو مضبوط بنائے:
صحت کے لیے اروی کا سب سے اہم عنصر مدافعتی نظام میں اس کا کردار ہے۔ اس میں ہر ایک سرونگ میں وٹامن سی کی بہت زیادہ مقدار ہوتی ہے۔ یہ وٹامن خون کے سفید خلیات بنانے کے لیے مدافعتی نظام کو متحرک کرنے میں مدد کر سکتا ہے، مزید برآں، وٹامن سی ایک اینٹی آکسیڈینٹ کے طور پر کام کرتا ہے، جو صحت کے سنگین حالات کی نشوونما کو روکنے میں مدد کر سکتا ہے۔

خون کی گردش میں اضافہ :
اس میں آئرن اور کاپر کی ممکنہ دوہری موجودگی اسے خون کی کمی کو روکنے اور پورے جسم میں گردش کو بڑھانے میں ممکنہ طور پر مدد دینے کے لیے ایک بہت اہم غذا بناتی ہے۔ آئرن اور کاپر دونوں ہی خون کے سرخ خلیات کی پیداوار کے لیے ضروری ہیں، جو ہمارے جسم کے اعضاء کے نظام تک تمام اہم آکسیجن لے جاتے ہیں۔ یہ، بدلے میں، میٹابولک سرگرمی کو بڑھانے، تھکاوٹ کو روکنے، نئے خلیات کی نشوونما، اور جسم کی عمومی آکسیڈیشن میں مدد کر سکتا ہے، جس کے نتیجے میں اعضاء اور نظام اپنی بہترین سطح پر کام کرتے ہیں!

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.